img 1613980775 9

ملکیتی زمینوں پر قبضہ قبول نہیں،استورگرینڈجرگہ میں قرارداد منظور- روزنامہ اوصاف

استور (بیورو رپورٹ)استور گرینڈ جرگہ کا اجلاس سٹی پارک گلگت میں منعقد ہوا جس میں استور کی تمام یونین کونسلز کے لوگوں کی نمائندگی موجود تھی۔گرینڈ جرگہ استور نے متفقہ طور پر قرارداد منظور کی۔اراکین گرینڈ جرگہ نے اپنی متفقہ قرارداد میں کہا کہ عوامی ملکیتی زمینوں کو سرکار نے ایک نوٹفیکشن کے ذریعے آپنے قبضے میں لینے کی ناکام کوشش کی ہے۔ہم کسی صورت اس ظالمانہ اقدام پر خاموش نہیں رہینگے۔استور کا آسی فیصد سے زائد علاقہ نیشنل پارکس کی حدود میں شامل کرکے اہلیان علاقہ کی تاریخی حثیت

​​​​​​​کو صرف ایک نوٹفیکشن کے ذریعے نہیں چھینا جاسکتا ہے۔ آگر حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لئے تو اسکو یہ ظالمانہ اقدام انتہائی مہنگا پڑے گا۔گرینڈ جرگہ استور کی منظم تشکیل کے لئے استور کے ہرگاؤں سے معتبران۔نمبرداران و عمائدین پر مشتمل جرگہ تشکیل دے کر گراس روٹ لیول پر نیشنل پارکس کے خلاف عوام کو آگاہی فراہم کی جائے گی۔ گرینڈ جرگہ استور جی۔بی اسمبلی کے اجلاس کے دوران علامتی احتجاج بھی کرے گی۔ اس ظالمانہ نیشنل پارک کے نوٹیفکیشن کو فی الفور منسوخ کیا جائے۔ عوام استور کے مالکانہ حقوق کو غضب کرکے فوائد بیان کرنے والے کسی صورت عوام اور علاقے کے خیر خواہ نہیں ہوسکتے۔ اس ایشو پر استور کے عوام میں سخت بے چینی پائی جاتی ہے۔اور یہ ایشو علاقے میں سول نافرمانی جیسی تحریک کو بھی جنم دے سکتی ہے۔ چیف سکریٹری فی الفور نیشنل پارک کا نوٹیفکیشن منسوخ کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں