img 1614098759 5

بچوں پر تشدد کے خلاف بل منظور- روزنامہ اوصاف

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)  سرکاری اورپرائیوٹ تعلیمی اداروں ، مدارس اورٹیوشن سنٹرپر بچوں پر تشدد کے خلاف بل منظور کر لیا گیا ہے ۔جس کی خلاف ورزی اب قانونی طو رپر قابل سزا جرم تصور ہو گی۔  معروف گلوکار اور سماجی شخصیت شہزاد رائے نے اس بل کو خوش آئند قراردیتے ہوئے اس کی بھرپور حمایت کی ہے۔ اس بل کی منظوری کے بعد اب طلبا پر تشدد کے مرتکب اساتذہ کی نوکریوں سے برطرفی، تنزلی یا تنخواہ میں کٹوتی عمل میں لائی جاسکے گی جبکہ بچوں پر سزا کے مرتکب والدین

بھی قانون کی سزا سے بچ نہیں سکیں گے۔تاہم کچھ حلقوں کا کہنا ہے کہ محدود سزا کا تصور اسلام میں بھی موجود ہے۔ یہ سزا اور اس کا ڈر بے راہروی اورتخریبی سرگرمیوں کے خلاف مزاحمت کا کام کرتے ہیں۔ ایسے بل کے کے منفی نتائج سامنے آئیں گے۔یہ استاد اور ماں باپ کا کردار محدود کردے گا۔اوراس سےطلبا اور بچوں میں نڈرپن اور بگاڑپیدا ہو گاکیونکہ اس حقیقت سے کوئی انکار نہیں کرسکتا کہ کم عمری میں بچے اپنے برے بھلے سے ناواقف ہوتے ہیں۔انھیں درست سمت میں لانا والدین اوراساتذہ ہی کی ذمہ داری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں